Followers

Monday, July 9, 2012

Forget

Keep smiling- for further reading click Older Posts
or Home 

This Site is to make you smile all the way, keep browsing, You will find very funny stuff in the following posts total 46 posts are there for your Smile, so plz Click at Older Posts

























We & ISRAEL

ھمکو ساری دنیا کے لوگ بیوخوف بنا رھے ھیں ، اسمیں انکے بڑے فائدے ھیں ، یہ دنیا کا

دستور ھے که طاقتور کمزوروں کے ملک پر انکی زمین جائدادوں پر قبضہ کرلیتا ھے

اور کمزور اور مغلوب قوم راستے سے ہٹ جاتی ھے

اس شکست میں اور اس ھار مان جانے والی صفت میں انسان کی بقا کا راز چھپا ھے

یه مغلوب قوم کھین اور جگه عزت اور سکون سے زندگی گزارتی ھے ، اور وقت کو بدلتے

دیر نھیں لگتی ، انکو بھی کبھی نہ کبھی غالب بننے کا موقع

مل ھی جاتا ھے

کل جب ھم فتوحات کرتے کرتے مشرق سے مغرب تک اور شمال سے جنوب تک جا پہونچے

تھے تو اس وقت دنیا کی ھر قوم ھم سے مغلوب ھو کر ، ھار مان کے ، اپنے ملک اور

زمین جائداد کو ھمارے حوالے کرکے پر سکون زندگی گزارتی رھی

ھم بھی کبھی فلسطین پر حاکم تھے

تو اب جب که ھم کمزور اور مغلوب ھیں ، تو کیا ھم اپنی شکست قبول کرکے

با عزت زندگی گزار نھیں سکتے ، ضرور گزار سکتے ھیں


میں آپکی فکر کو منفی نھیں بنا رھا ھوں ، بلکه منفی حالات میں 

بھی مثبت راھوں کی نشاندھی کر رھا ھوں  

 سونچ کے ساتھہ عمل کی بھی ضرورت ھے ، اپنی اوقعات کو نہ بھولو 

مگر دنیا کی سب سے زیادہ بیخوف اور نا لائق قوم ھم ھیں ، ھم کیوں نھیں قبول کرتے

که ھم کمزور ھیں ، روز بے گناہ فلسطینی مارے جاتے ھیں ، پوری نسل ھی ختم

ھوچکی ھے ، اور ھمکو لڑا نے والوں کو اس سے فائدہ ھے

ھمارا پوری دنیا میں ایک بھی مخلص لیڈر نھیں ھے جو اس جھگڑے کو بند

کرا سکے

ھمارے دشمن ھمکو مصروف رکھنا چاھتے ھیں

کبھی اسرائیل سے تو کبھی کسی اور سے ، یا همیں آپس میں ھی

فرقه بازی میں شیعوں سُننیوں کی خرافات میں لڑا تے رھتے ھیں

دوسری قوموں کی طرح ھم کو بھی اپنی شکست قبول کرکے پر سکون
زندگی گزارنی چاھیے

کل دوسری تمام قومیں ھماری غلام تھیں ، آج ھم انکے

یھ ھی دنیا کا دستور ھے ، انھوں نے بھی اپنا ملک اپنی حکومت کھوئی تھی

اس وقت انکی زمین کے ھم مالک تھے ، آج الله نے انھیں بنایا ھے

تو ھمیں اعترا ض کیوں ؟
فلسطین میں مرتا ھوا ایک بچّھ  

اگر ھم بھی بیسویں صدی کے ابتدا میں اسرائیل کو قبول کرکے دوستانہ تعلقات قائم

کرکے رھتے تو آج دنیا کی تاریخ ھی مختلف ھوتی

  ھم کو پر امن طریقے سے دین کی تبلیغ کا موقع ملتا ، ھم پر  ٹیررسٹ
ھونے کا الزام بھی نہ لگتا

     اور نا ھم پر روز ایک نئی آفت مسلط کی جاتی



ھم مظلوم بن کر اسلام کی تبلیغ کرتے رھتے تو آج دنیا کا ایک ایک فرد مسلمان ھوتا

ھماری تاریخ میں اس سے پہلے ایسا ھو چکا ھے

تاتاریوں نے تیرھویں صدی عیسوی میں پوری مسلم دنیا کو تھس نھس کردیا تھا

ھم بے بس ھوگئے تھے ، ھماری تبلیغ کی وجھہ سے ان تاتاری درندوں نے اسلام

قبول کیا ، اور ایک بار پھر دنیا میں اسلام کا غلبہ ھوگیا



ھم اپنی تاریخ سے تو سیکھتے نھیں ھیں ، مگر یھودیوں نے

ھماری تاریخ سے بہت اچّھا سبق سیکھا

ھٹلر کے مظالم کا بھانا بنا کر ، دنیا میں خود کو مظلوم بنا کے پیش کیا

ھمارے مسائل تو حل ھو نھیں رھے ، ھماری زمینیں برابر کم ھوتی

جا رھیں ھیں ، انڈونیسیہ کے ایسٹ ٹیمور اور سوڈان کے جنوبی حصّے پر غیر قابض ھو چکے

آدھی دنیا کی زمین ھمارے ملکوں میں ھے ، کیا فلسطینیوں کو

جنوبی سوڈان میں بسایا نھیں جا سکتا تھا ، اسطرح ھم سوڈان کی غیروں میں

تقسیم کو روک سکتے تھے ، مگر

ھم ھیں ھی بے وخوف ، اور ھمارے حکمران دشمنوں کے ایجنٹ ھیں  

 
ھم نا لائق بھی ھیں ، تبھی الله نے اپنی دنیا کا کاروبار ھم سے چھین کر

دوسرے لوگوں کو عطا کیا ھے


میں آپکی فکر کو منفی نھیں بنا رھا ھوں بلکھ ایک مثبت طریقے سے ایک پریشانی کا حقیقی حل بتا رھا ھوں

To read my other blogs please log on @

http://www.allah111.blogspot.com/

http://www.indianmuslim111.blogspot.com/

http://www.libertyhijacked.blogspot.com/

http://www.funnyurdutips.blogspot.com/

http://www.themodernreligion.com/assault/

or directly type engineer ishrat hussain mohammad on gooooogle and strike ENTER and see...

4 comments:

  1. عشرت حسین بھائی السلامُ علیکم
    تمام پوسٹیں ہی زبردست ہیں لیکن سیدنا آدم علیہ الصلواۃُ والسلام پر جو لطیفہ بنایا گیا وُہ ہٹادیں بلکہ اللہ کریم کی بارگاہ میں توبہ بھی کرلیں کیونکہ انبیا کرام کی ذات پر لطیفہ بازی حرام عمل ہے اُور کسی بھی نبی علیہ السلام کا مذاق بنانا یا اُنکی عظمت میں ہلکی بات کرنا کفر ہے ۔ اللہ
    کریم ہم سب کے ایمانوں کی حفاظت فرمائے

    آپکی دُعاوں کا طالب

    ReplyDelete
    Replies
    1. Walekum Assalam Dear Ishrat Iqbal bhai,

      Now I will remove that Joke,

      please do read my posts and guide me if you find any other

      mistakes.

      Delete
    2. My intention of writing the jokes is to spread the peacefull message of Islam in the friendly atmosphere of jokes and humour and smiles on face.

      Delete
  2. بھائی السلامُ علیکم
    آپ بُہت مبارکباد کے لائق ہیں کہ بجائے تاویلات پیش کرنے کہ آپ نے عملی قدم اُتھاتے ہُوئے وہاں سے اسم مبارک مٹادیا اللہ کریم آپکو خوب بہتریں جزا عطا فرمائے
    والسلام
    آپکا بھائی

    ReplyDelete

Dear Readers please comment, your suggestions will increase the knowledge of readers and of my too.